خیبرپختونخوا حکومت صوبے میں آئی ٹی کے فروع کے لئے سنجیدہ ہے، ڈاکٹر شہباز خان

خیبرپختونخوا حکومت صوبے میں انفارمیشن اینڈ کمیونکیشن ٹیکنالوجی کے فروع کے لئے سنجیدہ اقدامات اٹھارہا ہے۔ آئی ٹی کے شعبے میں سرمایہ کاری اور ترقی کی بدولت ناصرف جدید دور میں ترقی کی دوڑ میں شامل ہوسکتے ہیں بلکہ صوبے کے نوجوانوں کو باعزت روزگار بھی فراہم ہوسکے گا۔ ان خیالات کا اظہار خیبرپختونخوا انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ کے منیجنگ ڈاریکٹر ڈاکٹر شہباز خان نے آئی بورڈ کے دورے پر آئے ہوئے آسٹریلین ہائی کمیشن کے دورکنی وفد سے ملاقات کے دوران کی۔ وفد کی قیادت آسٹریلین ہائی کمیشن کے ڈپٹی ہیڈ آف میشن بریک باٹلے کررہے تھے۔ اس موقع پر ڈاریکٹر آئی ٹی بورڈ عاصم جمشید، ڈاریکٹر مارکیٹنگ محمد منیم خان، ڈپٹی ڈاریکٹر عاصم اسحاق، پراجیکٹ منیجر ایم ڈی ٹی ایف سعد جاوید اوردیگر افسران بھی موجود تھے

اس موقع پر ڈاکٹر شہباز خان نے آسٹریلین ہائی کمیشن کے وفد کو آئی ٹی بورڈ کے مختلف اقدامات اور منصوبوں کے حوالے سے بریفنگ دی۔ انہوں نے پاکستان کے سب سے بڑے سرکاری اینکوبیشن سنٹر درشل، یوتھ ایمپلائمنٹ پروگرام، ارلی ایج پروگرامنگ، خیبرپختونخوا سائبر سیکورٹی رسپانس سنٹر اور ملک کے پہلے حکومتی سرپرستی میں قائم کردہ بزنس پروسیسنگ آوٹ سورسنگ (بی پی او) کے اعراض ومقاصد سے مہمانوں کو آگاہ کیا۔ انہوں نے وفد کو بتایا کہ دور جدید کے تقاضوں کے مطابق صوبے کے بیشتر اداروں کو ڈیجٹیلاز کیا جارہا ہے۔ ڈاکٹرشہباز کا کہنا تھا کہ آئی ٹی بورڈ صوبے کے سرکاری، نیم سرکاری محکموں اور خودمختاراداروں کو آئی ٹی کے مد میں تکنیکی معاونت کے ساتھ ساتھ مختلف مواقع پر تربیتی ورکشاپ اور سیمنارز کا انعقاد بھی کررہا ہے۔وفد نے خیبرپختونخوا انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ کے منصوبوں اور اقدامات خصوصا درشل اور بی پی او میں دلچسپی کا اظہار کیا۔ اس موقع پر آسٹریلین ہائی کمیشن کے ڈپٹی ہیڈ آف میشن بریک باٹلے کا کہنا تھا کہ آئی بورڈ کے کم وقت میں ذیادہ اور کامیاب منصوبے قابل تعریف ہیں۔ انہوں نے صوبے کے نوجوانوں کی عملی تربیت کے لئے شروع کردہ پراجیکٹس کو بھی سراہا اور مستقبل میں آئی ٹی بورڈ کی معاونت کی یقین دہانی کرائی۔
آسڑیلین ہائی کمیشن کے وفد کو خیبرپختونخوا انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ کے زیرانتظام نئے تعمیر شدہ بی پی او کا دورہ بھی کرایا گیا۔ وفد نے بی پی او میں موجود سہولیات اور انتظامات کو سراہا۔ یاد رہے کہ آئی ٹی بورڈ کا قائم کردہ بی پی او مکمل طور پر تیار ہوچکاہے اور روان مہینے اس کا باقاعدہ افتتاح کیا جائیگا جس میں صوبے کے قریب سات سو نوجوانوں کو براہ راست روزگار فراہم ہوگا۔

Written by 

ڈیرہ اسماعیل خان سے تعلق رکھنے والی صحافی اور بلاگر قراۃالعین نیازی آگاہی وی لاگ کے ساتھ ایک سال سے وابسطہ ہے، ماس کمیونیکیشن میں پشاور یونیورسٹی سے ماسٹر کرنے کے بعد نجی نشریاتی ادارے آے آر وائے کے ساتھ ڈیسک پر کام کیا۔ پشاور یونیورسٹی کے ریڈیو سے کمپس راؤنڈ اپ بھی کرتی رہی ہیں۔ آج کل آگاہی وی لاگ کے ساتھ ویب ایڈیٹر اور بلاگر کے طور پر کام کر رہی ہیں