فیکٹ چیک: بریکنگ نیوز کی دوڑ میں استنبول دھماکے کی غلط فوٹیج شئیر کی گئی

ریاض غفور

بریکنگ نیوز کی دوڑ میں آگے نکلنے کے لیے ایک دفعہ پھر استنبول میں ہونے والے خودکش دھماکے کی غلط فوٹیج شئیر کی گئی. آبزرور ڈپلومیٹ ڈاٹ کام کے ٹویٹر ہینڈل نے بغیر تصدیق کے 2016 کی ایک ویڈیو فوٹیج شئیر کی.

آبزرور ڈپلومیٹ نے غلط ویڈیو ٹویٹ کرتے ہوئے لکھا کہ *بریکنگ: خودکش حملہ آور کی خصوصی فوٹیج۔ ٹاکسم اسکوائر پر دھماکے میں کم از کم چھ افراد ہلاک، ایردوان* ٹویٹر یوزرز کی جانب سے ریپلائے میں بار بار یاد دہانی کرائی گئی کہ یہ ویڈیو پرانی ہے. واضح رہے کہ شئیر کی گئی ویڈیو میں واضح طور پر 2016 اور تاریخ بھی نظر آ رہا ہوتا ہے. یوزرز کی جانب سے ریکشن کو دیکھنے ہوئے فوری طور پر آبزرور ڈپلومیٹ نے درست ویڈیو کے ساتھ ٹویٹ کرتے ہوئے لکھا کہ *مذکورہ ویڈیو 2016 کی ہے۔ استنبول کے مصروف استقلال ایونیو میں ہونے والے دھماکے کی یہ سی سی ٹی وی فوٹیج آج کی ہے۔*

(https://twitter.com/observerdiplo/status/1591861897162358784?t=NmCDn9U1lyoXAtNOozxkGA&s=19)واضح رہے کہ ترکیہ کے دارالحکومت استبول میں اتوار کے روز ایک افسوسناک دہشتگرد حملے میں تقریباً چھ افراد ہلاک ہوئے جبکہ 83 کے قریب زخمی ہوئے. نائب صدر کے مطابق ہمیں شبہ ہے کہ خودکش بمبار ایک خاتون تھیں. دوسری جانب یوکرین جنگ کے حوالے سے ٹویٹ کرنے والی مشہور ٹویٹر ہینڈل فلیش فاسٹ نیوز نے بھی 2016 کی غلط فوٹیج شئیر کی لیکن فالوورز کی جانب سے مسلسل نشاندھی پر ٹویٹ ڈیلیٹ کر دی گئی. (https://twitter.com/Flash_news_ua/status/1591793263060582402?t=0XfZEIeJDdlvplWfaF6vmA&s=08) فیک نیوز پر نظر رکھنے والے میڈیا ماہرین کے مطابق صارفین، صحافی اور میڈیا آرگنائزیشنز کو کسی بھی مواد کو شئیر کرنے سے پہلے ڈبل چیک کرنا چاہئیے تاکہ اینڈ یوزر گمراہ کن مواد سے بچا جا سکے.

Written by